سنتھیٹک کورٹس کا معائنہ پاکستان انجنیئرنگ کونسل سے کرانے کا بیڈمنٹن کے کھلاڑیو ں کا مطالبہ

Share on facebook
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on email

پشاور…بیڈمنٹن سے وابستہ کھلاڑیوں اور تنظیموں نے پشاور سپورٹس کمپلیکس اور حیات آباد سپورٹس کمپلیکس میں نئے بننے والے بیڈمنٹن کورٹ جنہیں سنتھیٹک کورٹ کا نام دیا گیا ہے کی انسپکشن پاکستان انجنیئرنگ کونسل سے کرانے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ نئے کھلاڑیوں کو طارق ودود بیڈمنٹن ہال پشاور سپورٹس کمپلیکس اور حیا ت آباد سپورٹس کمپلیکس میں پریکٹس کے دوران پائوں میں مسلسل درد رہنے کا انکشاف ہوا ہے جس کے باعث بعض نئے آنیوالے کھلاڑیوں خصوصا خواتین کھلاڑیوں نے بیڈمنٹن کھیلنے سے معذرت کرلی ہے اور کہا ہے کہ سنتھیٹک کورٹ کی وجہ سے انہیں ایڑھیوں اور جوڑوں میں درد کی شکایت رہنے لگی ہیں بیڈمنٹن سے وابستہ کھلاڑیوں و تنظیموں کے مطابق سپورٹس ڈائریکٹریٹ نے دو نئے بیڈمنٹن ہال جو کہ ووڈن گرائونڈ پر تھے کو ختم کرکے وہاں پر سنتھیٹک کورٹ بنا دئیے ہیں تاہم یہ کورٹ حقیقی معنوں میں سنتھیٹک نہیں اور صرف پینٹ کوٹڈ کرکے انہیں سنتھیٹک کا نام دیا گیا ہے جس کی وجہ سے جہاں ببل بننے کا سلسلہ شروع ہوا ہے اور یہ صرف تین ماہ کے اندر شروع ہوا جس کی اب تک تین مرتبہ دونو ں کورٹ کی ریپئرنگ بھی انجکشن لگاکر ختم کرنے کی کوشش کی گئی تاہم اس پر ابھی کام نہیں ہوا حالانکہ اس کی مدت گارنٹی بھی پانچ سال دی گئی ہیں بیڈمنٹن کے کھیلوں سے وابستہ حلقوںکے مطابق ان نا م نہاد سنتھیٹک کورٹ کی وجہ سے کھلاڑیوں کو کھیل سمیت ایڑھیوں اور جوڑوں میں درد کی شکایت عام ہونے لگی ہیں او ر یہ پروفیشنل کھلاڑیوں کو بھی ناکارہ بنا رہی ہیں انہوں نے وزیراعلی خیبر پختونخواہ جو خود بھی کھیلوں کے انچارج وزیر ہیں سے اس معاملے میں نوٹس لینے اور سنتیٹھک کے نام پر بننے والے پینٹ کوٹڈ کورٹ کا معائنہ پاکستان انجنیئرنگ کونسل سے کرانے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ نہ صرف عوامی ٹیکسوں کا پیسہ ضائع ہونے سے بچایا جاسکے بلکہ کرپٹ افراد کے خلاف کارروائی بھی کی ہو.